بی آر ٹی منصوبے میں تکنیکی غلطیاں، ذمہ داروں کیخلاف کارروائی کی سفارش

بی آر ٹی منصوبے میں تکنیکی غلطیاں، ذمہ داروں کیخلاف کارروائی کی سفارش

پشاور بس ریپد ٹرانزٹ منصوبے میں تکنیکی غلطیوں کا انکشاف ہوا ہے،  وزیراعلیٰ خیبر پختونخواکو بھیجی گئی تحقیقاتی رپورٹ میں منصوبے میں کوتاہی کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق کے پی کے بی آر ٹی منصوبہ کے نقشے اور تعمیراتی کام میں تکنیکی غلطیوں کا انکشاف ہوا ہے۔ بس ریپڈ ٹرانزٹ منصوبے کے تکنیکی مسائل سے متعلق تحقیقاتی رپورٹ وزیراعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان کو ارسال کردی گئی۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جلد بازی اور نامناسب منصوبہ بندی سے منصوبہ مسائل کا شکار ہے، لاگت میں اضافہ بھی ڈیزائن کی تبدیلی سے ہوا۔

سروس روڈ کے مین روڈ سے منسلک ہونے سے ٹریفک مسائل پیدا ہوئے۔ بعض مقامات پر پیدل چلنے والوں کو سڑک عبور کرنے کیلئے سولہ سو میٹر چلنا پڑے گا، رپورٹ میں منصوبے میں کوتاہی کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔

یاد رہے کہ توقعات کے مطابق بی آر ٹی منصوبے کا افتتاح نہیں ہو سکا تھا، جس پر وزیرِاعلیٰ خیبر پختون خوا محمود خان نے بس ریپڈ ٹرانزٹ منصوبے میں تاخیر پر صوبائی انسپکشن ٹیم کو منصوبے کی تکمیل میں تاخیر کی انکوائری کا حکم دیا تھا۔

منصوبے سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ 23 مارچ کو منصوبے کی سافٹ اوپننگ کرنے کے بجائے اس بار بھی اس کی کوئی اور تاریخ دی گئی تو پھر وہ اگلے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے، اور منصوبے میں غفلت کے مرتکب افراد کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔