خالد محبوب دور موجود کے منفرد شاعر ہیں:ڈاکٹر اسلم ادیب

خالد محبوب دور موجود کے منفرد شاعر ہیں:ڈاکٹر اسلم ادیب

  محبوب دور موجود کے منفرد شاعر ہیں
رپورٹ و تصاویر: عبدالخالق قریشی

قدیم شعرا نے اپنے اپنے عہد کی شاعری کی ہے، آج کے نوجوان شاعر موجودہ عہد کی شاعری کر رہے ہیں، جو کہ با معنی اور توانا ہے، خالد محبوب لمحہ موجود کی شاعری کر رہے ہیں، جو کہ بہت توانا اور چونکا دینے والی ہے۔ ان خیالات کا اظہار مقررین نے چولستان علمی ادبی فورم بہاولپور کے منعقدہ ہفتہ وار اجلاس کے مہمان خصوصی منفرد اسلوب کے معروف نوجوان شاعر خالد محبوب کی شاعری پر تنقیدی نشست میں کیا۔ جس کی صدارت بہاولپور کی معروف سماجی و ادب نواز شخصیت محسن رضا جوئیہ ایڈووکیٹ نے کی، جبکہ اجلاس کے مہمان اعزاز پاکستان کی فیشن انڈسٹری کے معروف انٹرنیشنل فیشن ڈیزائنر، ٹی وی، فلم اداکار اور شاعر یوسف بشیر قریشی المعروف(YBQ) تھے، نظامت کے فرائض محمد ضیغم شاہ نے انجام دئیے،

Cholistan Ilmi Adabi Forum Bahawalpur
Cholistan Ilmi Adabi Forum Bahawalpur

مہمان خصوصی خالد محبوب نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ چولستان فورم نے ہمیشہ علم وادب کی ترویج میں اپنا قائدانہ کردار ادا کرتے ہوئے نئے تخلیق کاروں کی حوصلہ کرکے انھیں آگے بڑھنے کے مواقع فراہم کیے، اور آج مجھے بطور مہمان خصوصی مدعو کرنا اُسی سلسلے کی کڑی ہے۔ بعد ازاں انھوں نے اپنا منتخب کلام سنایا، نمونہ کلام درج ذیل ہے۔

Cholistan Ilmi Adabi Forum Bahawalpur
Cholistan Ilmi Adabi Forum Bahawalpur

اس زندگی سے پیار کے لمحات کاٹ کر
تم نے تو رکھ دئیے ہیں مرے ہاتھ کاٹ کر
اس شہر میں بہت سے مضافات ضم ہوئے
کالونیاں بنا لی ہیں باغات کاٹ کر
محبوب شور کم نہیں کمرے کا ہو سکا
مہمان تو چلے گئے ہیں رات کاٹ کر
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
رستہ وہ میرا روکتی تھی اور میں اسے
مجھ کو عزیز نوکری تھی اور میں اسے
اک دوسرے کی پہلی محبت نہیں تھے ہم
پاگل مجھے بنا رہی تھی اور میں اسے
دونوں کا مفلسی میں گزارہ نہ ہو سکا
اپنا سکوں وہ چاہتی تھی اور میں اسے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
رقم خاصی اکٹھی ہو گئی تھی
مگر وہ چیز مہنگی ہوگئی تھی
ہم اتنی گرمجوشی سے ملے تھے
ہماری چائے ٹھنڈی ہو گئی تھی
سمجھ کر ہم دوائی پی گئے تھے
تمھاری بات کڑوی ہو گئی تھی
پلٹ آنا ہی بنتا تھا وہاں سے
ہمارے ساتھ جتنی ہو گئی تھی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
چھوڑ جائیں گے قافلے والے
ہم تو ہیں پیڑ راستے والے
دیکھ ! آیا ہوا ہے آنکھوں میں
زہر کانوں میں گھولنے والے
اک زمانہ تھا عید آنے پر
ہم مناتے تھے روٹھنے والے
ڈھیل دینے سے بچ گئے محبوب
ورنہ رشتے تھے ٹوٹنے والے
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
اس پر گفتگو کرتے ہوئے مصنف، ماہر تعلیم اور دانشور
ڈاکٹر اسلم ادیب نے کہا کہ پچھلے پانچ سالوں میں نامور شاعر اظہر فراغ نے جن نوجوان شعرا کو تربیت دی ہے، آج اُن کا شمار کامیاب شعرا میں ہوتا ہے، خالد محبوب کا شمار بھی اُن ہی کے شاگردوں میں ہوتا ہے۔ اُردو ادب میں جو تنقیدی سانچے ہیں، انھیں اب بدلنا چاہئیے کیونکہ خالد محبوب جیسے نوجوان جو شاعری کر رہے ہیں، انھیں اُن پرانے سانچوں میں پرکھا نہیں جاسکتا، خالد محبوب اپنے عہد کی شاعری کر رہے ہیں، یہ ایک منفرد شاعر ہیں۔ معروف شاعر، مصنف و محقق ڈاکٹر نصراللہ خان ناصر نے کہا کہ خالد محبوب موجودہ دور کی کلاسیکی شاعری سے ہٹ کر شاعری کر رہے ہیں، ان کی تخلیقات بہت طاقتور ہیں، جن سے کہیں بھی محسوس نہیں ہوتا کہ یہ نئے شاعر ہی۔ معروف شاعر مصنف و ماہر تعلیم ڈاکٹر نواز کاوش نے کہا کہ بڑے شہروں سے دور مضافاتی شہروں میں جو شاعری ہو رہی ہے، وہ کافی مضبوط ہے، ہمارا شاعر آج کے تناظر میں جو شاعری کر رہا ہے، وہ بالکل منفرد ہے، خالد محبوب نے جو آج شاعری پیش کی ہے، اس میں انھوں نے قافیہ اور ردیف کا خاص خیال رکھا ہے، حالانکہ یہ خاصا مشکل تھا، مگر انھوں نے اسے بڑے خوبصورت انداز میں پیش کیا ہے۔ نامور نوجوان شاعر اظہر فراغ نے کہا کہ آج کا نوجوان بڑی جاندار شاعری کر رہا ہے، بہاولپور کے نوجوان شعرا اس میں پیش پیش ہیں، یہ عام اسلوب سے ہٹ کر شاعری کر رہے ہیں، اور ان کی شاعری کو سوشل میڈیا نے ملکی سرحدوں باہر تک متعارف کروا دیا ہے، ہمارے شہر کے نوجوانوں کی تخلیقات پڑوسی ملک میں بھی بہت پذیرائی حاصل کر رہی ہیں۔ مہمان اعزاز یوسف بشیر قریشی(YBQ) نے کہا کہ بہاولپور سے میرا پرانا تعلق ہے، میرے دادا کا تعلق بہاولپور سے تھا اور میرے والد کی پیدائش بھی یہیں کی ہے، ہم یہاں ایک فلم کی شوٹنگ کیلئے آئے ہوئے ہیں، آج اس محفل میں شرکت کرکے انتہائی خوشگوار حیرت ہوئی کہ یہ شہر ادبی ذوق سے مالامال ہے، اور یہاں کے نوجوان بڑی خوبصورت شاعری کر رہے ہیں، بعد ازاں انھوں اپنی ایک معروف پنجابی غزل سنائی جسے شرکا نے بہت سراہا۔

اس کے علاوہ صاحب صدر محسن رضا جوئیہ، ڈاکٹر افتخار علی افتخار، امتیاز حسین لکھویرا، پارس مزاری اور دیگر نے بھی خالد محبوب کی شاعری پر اظہار خیال کیا۔ بعد ازاں شعری نشست ہوئی اظہر فراغ، خالد محبوب، محسن دوست، رباب حیدری، پارس مزاری اور اشرف خان نے اپنا کلام پیش کر کے خوب داد سمیٹی۔
رپورٹ و تصاویر: عبدالخالق قریشی