پیمرا عدلیہ مخالف پروگرام نشر نہ کرنے کاپابند ہے: لاہور ہائی کورٹ

پیمرا عدلیہ مخالف پروگرام نشر نہ کرنے کاپابند ہے: لاہور ہائی کورٹ

لاہور(نیوزلیب) ہائی کورٹ نے عدلیہ مخالف بیانات نشر کرنے پر عبوری پابندی عائد کرتے ہوئے ذرائع ابلاغ کے نگران ادارے پیمرا کو حکم دیا ہے کہ وہ تمام ٹی وی چینلز کی نشریات پر نظر رکھے اور اس بات کو یقینی بنائے کہ عدلیہ مخالف پروگرام نشر نہ ہوں۔
لاہور ہائی کورٹ نے یہ حکم ایڈووکیٹ اظہر صدیق کی طرف سے نواز شریف اور مریم نواز کی عدلیہ مخالف تقاریر کے خلاف درخواست کی سماعت کرتے ہوئے دیا۔

درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ ’ہم نے تقاریر کے خلاف پیمرا سے رجوع کیا لیکن وہاں حکومت نے اپنے لوگ لگائے ہوئے ہیں، جو شکایت پر نو ایکشن لکھ دیتے ہیں۔‘

یاد رہے کہ حال ہی میں سپریم کورٹ آف پاکستان نے مسلم لیگ کے سابق سینیٹر نہال ہاشمی کو عدلیہ مخالف بیان دینے پر سزا سنائی تھی اور جس بنا پر انھیں سینیٹ میں اپنی رکنیت سے بھی ہاتھ دھونا پڑے تھے۔

عدلیہ مخالف بیانات دینے کے الزامات کا سامنا کئی اور اہم مسلم لیگی رہنماؤں کو بھی ہے۔

درخواست گزار نے موقف اختیار کیا تھا کہ اعلیٰ عدلیہ کے خلاف بیان بازی کرنے پر نواز شریف، مریم نواز، طلال چوہدری اور رانا ثنا اللہ کے خلاف توہینِ عدالت کی کارروائی کرے جبکہ اس کے ساتھ ساتھ پیمرا کے خلاف بھی کارروائی کی جائے۔