ایم فل اور پی ایچ ڈی کے طلبا کے لئے اہم خبر، پابندی عائد کرنے کا اعادہ

ایم فل اور پی ایچ ڈی کے مقالے دوسروں سے لکھوانے کو جرم قرار دینے کا مطالبہ کیا ہے۔

سعودی مجلس شوری نے کہا ہے کہ جامعات کے طلباء کے لیے ایم فل اور پی ایچ ڈی کے مقالے یا تحقیقی مضامین دوسروں سے لکھوانے پر پابندی عائد کی جائے اور اس عمل کو جرم قرار دیا جائے۔

مجلس شوری کے ماتحت تعلیمی وسائنسی تحقیق کمیٹی کے مطابق جو ایجنسیاں اور افراد طلباء کے لیے تحقیقی مقالے اور مضامین تیار کر رہے ہیں، وہ ایک طرح سے سعودی عرب کی نئی نسل کو بگاڑ رہے ہیں۔

تعلیمی وسائنسی تحقیق کمیٹی نے کہا کہ اس کاروبار کی وجہ سے جامعات سے فارغ ہونے والے طلباء کا معیار گر رہا ہے۔ یورنیورسٹیوں کے طلباء کے لیے تحقیقی مقالے تیار کرنا علمی بدعنوانی ہے۔

مجلس شوری کی کمیٹی نے مزید کہا کہ علمی تحقیق کے سلسلے میں ضابطہ اخلاق کی پابندی ضروری ہے۔ ہر طرح کی علمی بدعنوانی کو جرم قرار دیا جائے۔ ایسا کرنے والے طالب علم یا طالبہ کے خلاف محکمہ جاتی تادیبی کارروائی پر اکتفا نہ کیا جائے ۔