ایران میں عدم استحکام کے پاکستانی سلامتی پر تباہ کن اثرات ہونگے، قریشی

ایران میں عدم استحکام کے پاکستانی سلامتی پر تباہ کن اثرات ہونگے، قریشی

برسلز(نیوزلیب) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے خبردار کیا ہے کہ امریکا اور ایران کی صورتحال عالمی اور علاقائی امن کیلئے سنگین خطرہ بنتی جا رہی ہے۔ ایران میں عدم استحکام کے پاکستانی سلامتی پر تباہ کن اثرات ہونگے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا یورپی یونین کی سیاسی اور سلامتی کمیٹی سے خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان کو امریکا اور ایران کی موجودہ صورتحال پر تشویش ہے۔ امریکا لڑاکا طیارہ بردار بیڑے کا خلیج فارس میں آنا امن کیلئے خطرہ ہے۔ امریکا نے ایران پر حملہ کیا تو افغان امن عمل پر بھی تباہ کن اثرات مرتب ہوں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ یورپی یونین ناصرف ہمارا روایتی حلیف ہے بلکہ معاشی شراکت دار بھی ہے۔ ہمارا تعاون جمہوریت، کثیر شراکتی، باہمی ہم آہنگی اور احترام کی مشترک اقدار پر مبنی ہے۔

افغان امن عمل پر بات کرتے ہوئے وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان نے افغانستان میں امن کیلیے امریکا اور طالبان کے مذاکرات میں سہولت کاری کی۔ افغانستان کے مستقبل کا خاکہ تیار کرتے ہوئے چار نکات نظر انداز نہ کیے جائیں۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستان میں دہشتگردی میں بھارت کے ملوث ہونے کے سنجیدہ امور ہمارے علم میں ہیں۔ پاکستان اور بھارت میں ہتھیاروں کا بڑھتا عدم توازن علاقائی تذویراتی استحکام خطرے میں ڈال رہا ہے۔ بعض ممالک نے حساس ٹیکنالوجی بھارت کو دے کر امتیازی سلوک برتا۔

انہوں نے کہا کہ بھارتی بحریہ کا حاضر سروس افسر کمانڈر کلبھوشن پاکستان کی حراست میں ہے۔ اس نے ٹھوس شواہد کے علاوہ پاکستان میں دہشتگردی کا اعتراف کیا۔