اپوزیشن جماعتیں چیئرمین سینیٹ کیخلاف تحریک عدم اعتماد لانے کیلئے متحد

اپوزیشن جماعتیں چیئرمین سینیٹ کیخلاف تحریک عدم اعتماد لانے کیلئے متحد

اسلام آباد(نیوزلیب) اپوزیشن جماعتیں چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے کے لئے تحریک عدم اعتماد لانے کیلئے متحد ہوگئیں، قرارداد پر دستخط کیلئے حزب اختلاف کے سینیٹرز کی بیٹھک کچھ دیر بعد پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوگی۔

ادھر حاصل بزنجو کا کہنا ہے کہ اجلاس میں اپوزیشن سینیٹرز کے دستخط کرانے کے بعد قرارداد جمع کرائی جائے گی، چیئرمین سینیٹ کے لیے اپوزیشن کے امیدوار کا فیصلہ 11 جولائی کو رہبر کمیٹی کے اجلاس میں کیا جائے گا۔

چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے کیلئے حزب اختلاف کی جماعتوں کے پاس مطلوبہ اکثریت سے زائد کی تعداد موجود ہے، 104 رکنی ایوان میں سینیٹرز کی موجودہ تعداد 103 میں سے چیئرمین کی نشست کے لئے 53 ارکان کی حمایت درکارہے۔

مسلم لیگ ن کے سینیٹرز کی تعداد 28، پیپلز پارٹی کے 20، نیشنل پارٹی کے 5، جے یو آئی ف کے 4، پختونخوا میپ کے 2 اور اے این پی کا ایک رکن شامل ہے۔ ایوان بالا کے قواعد کے مطابق موجودہ چیئرمین (صادق سنجرانی ) کو ہٹانے کے لئے ایک چوتھائی ارکان کے دستخطوں کے ساتھ قرارداد لانے کے لئے تحریک جمع کرائی جائیگی۔

سینیٹ کے رولز آف پروسیجر کے تحت تحریک پر ووٹنگ کے لئے سات روز بعد اجلاس بلایا جائے گا جس میں قرارداد پر ووٹنگ کرائی جائے گی، تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کی صورت میں موجودہ چیئرمین عہدہ چھوڑ دیں گے اور اس کے بعد سینیٹ سیکرٹریٹ نئے چیئرمین کے انتخاب کے لئے شیڈول جاری کرے گا۔